مفتی عبدالقوی پھنس گئے، موبائل سے غیراخلاقی ویڈیوز بھی برآمد

ملتان: مقتول ماڈل قندیل بلوچ کے والد عظیم نے الزام عائد کیا ہے کہ مفتی عبدالقوی نے گرفتاری سے پہلے انہیں ایک کروڑ روپے کی پیش کش کی تھی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ مفتی عبدالقوی کے اکسانے پر ان کے بیٹے اور دیگر افراد نے قندیل بلوچ کو قتل کیا۔ قندیل کو قتل کرنیوالا اصل ملزم ان کا بھتیجا حق نواز تھا۔ قندیل کو مار کر دریا میں پھینکنے کا پروگرام بھی بنایا گیا تھا، دووسری جانب میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ دوران تفتیش مفتی قوی کے موبائل سے چالیس غیر اخلاقی وڈیوز نکلی ہیں، سوشل میڈیا پر جاری بحث میں یہ دعوے بھی کئے جارہے ہیں کہ مفتی عبدالقوی کے موبائل سے نکلنے والی فحش ویڈیوز میں زیادہ تعداد زیادتی سے متعلق ویڈیوز کی ہے۔ واضح رہے کہ مفتی عبدالقوی تین روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے قبضے میں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

دھرنے,کے موقع, پر بھیرہ انٹرچیج پرتوڑ پھوڑ, اورجلاؤگھیراؤ

دھرنےکے موقع پر بھیرہ انٹرچیج پرتوڑ پھوڑ اورجلاؤگھیراؤ

سرگودھا: انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نے پاکستان عوامی تحریک کےسربراہ ڈاکٹرطاہرالقادری کواشتہاری قراردے کرگرفتار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے