قائداعظم یونیورسٹی میں طلبہ کا احتجاج، حالات کشیدہ، تدریسی عمل معطل

اسلام آباد: وفاقی دارالحکومت میں واقع قائداعظم یونیورسٹی کے طلبہ نے ایک بار پھر احتجاج شروع کردیا ہے جس کی وجہ سے جامعہ کی صورتحال کشیدہ ہونے کے باعث تدریسی عمل معطل ہوگیا ہے۔ قائداعظم یونیورسٹی کے طلبہ نے اپنے مطالبات منوانے کے لئے ایک بار پھر احتجاج شروع کردیا ہے۔ احتجاجی طلبہ نے تمام ڈیپارٹمنٹس کو بند کروانا شروع کردیا جس کے بعد یونیورسٹی کی صورتحال کشیدہ ہوگئی۔ اتنظامیہ کی اطلاع پر پولیس کی بھاری نفری یونیورسٹی میں داخل ہوگئی اور متعدد طلبہ کو گرفتار کرلیا گیا اور اب تک 100 سے زائد طلبہ کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔ ساتھیوں کی گرفتاری کے بعد احتجاجی طلبہ مشتعل ہوگئے اور پولیس کے ساتھ ہاتھا پائی بھی ہوئی اور اس دوران ایک طالبہ سمیت متعدد طلبہ زخمی بھی ہوئے تاہم صورتحال کشیدہ ہونے کے باعث یونیورسٹی میں تدریسی عمل معطل ہوگیا ہے۔ احتجاجی طلبہ کا کہنا ہے کہ جب تک ہمارے گرفتار ساتھیوں کو رہا اور یونیورسٹی سے معطل کئے گئے طلبہ کو بحال نہ کیا گیا تو یونیورسٹی میں تدریسی عمل معطل رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں

دہشتگردوں, نے, پاکستان کی, سرزمین, پرحملہ کیا

دہشتگردوں نے پاکستان کی سرزمین پرحملہ کیا

اسلام آباد: دہشتگردوں نے پاکستان کی سرزمین پرحملہ کیا، 18 اپریل کوسرحد پار سے 15 …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے