اسلام و آزادی کے نعروں کے بیچ کشمیری سکالر، کرکٹر اور شہری سپرد خاک

سری نگر:  لتر پلوامہ جھڑپ میں مارے گئے جنگجوؤں اور ایک شہری کو ہزاروں لوگوں کی موجودگی اور اسلام و آزادی کے نعروں کے بیچ اپنے اپنے آبائی علاقوں میں سپرد خاک کیا گیا۔ دریں اثنا لوگوں کی ایک بڑی تعداد کے ساتھ ساتھ مذاحمتی لیڈران نے جانبحق افراد کے گھر جاکر لواحقین کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ سی این ایس کے مطابق لتر پلوامہ میں قابض فورسز کے ساتھ جھڑپ میں لشکرِ طیبہ کا ضلع کمانڈر اور معروف کرکٹر وسیم شاہ عرف اُسامہ اور ایک شہری گلزار احمد کی میتوں کو اسلام اور آزادی کے نعروں کے بیچ اپنے اپنے علاقوں تک پہنچایا گیا۔ ہزاروں لوگوں نے شرکت کی اور پھر ان کو پُرنم آنکھوں کے ساتھ سپردِ خاک کردیا گیا۔ جلوس میں شامل مرد ’’بھارت کے خلاف اور اسلام و آزادی‘‘ کے حق میں نعرہ بازی کر رہے تھے جبکہ خواتین روایتی ’’ونون‘‘ کے انداز میں غم ظاہر کرنے والے گانے گاتے ہوئے جنگجووں کے ساتھ وابستگی جتلا رہی تھیں۔

خونین جھڑپ  میں مارے گئے لشکر طیبہ کے ضلع کمانڈر اور معروف کرکٹر وسیم شاہ کی لاش کو ایک بڑے جلوس کی صورت میں اس کے آبائی علاقہ ہفہ شرمال شوپیان لائی گئی جہاں کہرام مچ گیا بعد میں اسے اسلام اور آزادی کے نعروں کے بیچ سپرد لحد کیا گیا۔ اس طرح ناصر احمد اور گلزار احمد کو بھی اسلام و آزادی کے حق میں فلک شگاف نعروں کے بیچ اشکبار آنکھوں سے سپرد خاک کیا گیا، جس دوران ہزاروں لوگوں نے اس کی کے تجہیز و تکفین میں شرکت کی۔ لوگوں اور مزاحمتی قائدین کی ایک بڑی تعداد ان کے گھر گئی اور ان سے دلجوئی و تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے ان شہداء کو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے ان کے ایصال ثواب کے لئے بھی دعا کی۔

یہ بھی پڑھیں

تنازعہ کشمیر کی بدولت پورا جنوبی ایشیا ایک ہیجانی کیفیت کا شکار ہے، مسعود خان

صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ ڈاکٹر عاصمہ شاکر کی کتاب …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے