گزین مری کی رہائی سے قبل دوبارہ گرفتاری توہین عدالت ہے، ارباب طاہر ایڈووکیٹ

کوئٹہ: نوابزادہ گزین مری کے وکیل ارباب طاہر ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ بلوچستان ہائیکورٹ کے حکم کے باوجود نوابزادہ گزین مری کو رہائی سے قبل حراست میں لینا توہین عدالت ہے اور ان کے خلاف کوئی کیس نہیں تھا۔ پولیس نے ایک سازش کے تحت انڈسٹریل تھانے میں ایف آئی آر کا بہانہ بنا کر گرفتار کر لیا۔ اس حوالے سے عدالت سے رجوع کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہدہ جیل کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نوابزادہ گزین مری کو 2 کیسز کے بعد تین ایم پی او کے تحت گرفتار کرکے جیل منتقل کیا تھا۔ بلوچستان ہائیکورٹ سے رہا کرنے کے حکم کے باوجود پولیس نے پھر ان کو جیل کے اندر سے گرفتار کرکے توہین عدالت کی۔ پولیس حکام نے خود کہا کہ نوابزادہ گزین مری کیخلاف کوئی کیس نہیں ہے اور نہ ہی ان کیخلاف وارنٹ تھے۔ اب انڈسٹریل تھانہ میں 2015ء کی ایک ایف آئی آر میں گرفتار کرکے کہا گیا کہ ہم صرف اس کیس میں ان سے تفتیش کریں گے۔ نوابزادہ گزین مری کو جیل کے احاطے سے گرفتار کرکے پولیس نے بلوچستان ہائیکورٹ کے حکم کی توہین کی ہے اور میڈیا کے سامنے بھی ان کو بولنے نہیں دیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

بگٹی کرکٹ اسٹیڈیم میں واحد ایک روزہ میچ 1996 میں کھیلاگیا تھا

بگٹی کرکٹ اسٹیڈیم میں واحد ایک روزہ میچ 1996 میں کھیلاگیا تھا

کوئٹہ: میزبان ٹیم 28 سے 31 اکتوبر تک خیبر پختونخوا جبکہ 4 سے 7 نومبر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے