چھرامار حملہ آور کوپکڑنے کے لیے سوشل میڈیا پر عوام کے مشورے

کراچی: شہر میں جہاں خواتین پر چاقو سے حملہ کرنے والے ملزم نے دہشت پھیلائی ہوئی ہے وہیں سوشل میڈیا پر بھی اس کے چرچے ہیں کوئی اسے سازش قرار دے رہا ہے تو کوئی اسے پکڑنے کے طریقے بتاکر عقلمندی کے ثبوت دے رہا ہے۔ گلستان جوہرسمیت مختلف علاقوں میں تیز دھار آلے کی مدد سے ایک درجن سے زائد خواتین کو زخمی کرکے فرارہونے والے حملہ آور کی دہشت شہر قائد سے نکل کر سوشل میڈیا تک جاپہنچی ہے، گزشتہ روزایکسپریس نیوز نے اپنے صارفین سے حملہ آور کو پکڑنے کے طریقے پوچھے تھے جس کے جواب میں انہوں نے ملزم کو پکڑنے کے کئی مشورے دئیے ہیں جن میں چند مفید اور چند نہایت دلچسپ ہیں۔
فیس بک پر ایک صارف نے اس سنگین مسئلے کا نہایت دلچسپ انداز میں حل بتاتے ہوئے کہا کہ 2 یا 3 پولیس والوں کو برقع پہنا کر روڈ پر چھوڑ دو پھر دیکھو کیا ہوتا ہے۔ جب کہ ایک اور صارف عمران سحر نے نہایت مفید مشورہ دیتے ہوئے لکھا کہ کمانڈو لڑکیاں جن کی تربیت مکمل ہوگئی ہو انہیں اسلحہ دے کر واردات والے علاقوں میں عام کپڑوں میں تعینات کیا جائے، ملزم صرف 3 دن میں پکڑا جائے گا۔ ایک صارف نے نہایت غصے میں لکھا کہ اگراس مسئلے کا حل عوام کو ہی بتانا ہے تو پولیس کا کیا کام؟، اس کے علاوہ ٹوئٹر پر بھی صارفین نے پولیس کی ناکامی پربرہمی کا اظہارکرتے ہوئے خوب تنقید کی، ایک صارف نے لکھا زمینوں، قبرستانوں اور 120گزکے مکان سے 3 ٹرک اسلحہ نکالنے والے پولیس اہلکارلڑکیوں کو چھری مارنے والے کو پکڑنے میں ناکام؟۔جب کہ ایک صارف نے پولیس کی ناکامی پر تنقید کرتے ہوئے خواتین کو اپنی حفاظت خود کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے لکھا کہ خواتین کرکٹ بیٹ یا ہاکی لے کرگھر سے باہر نکلیں۔
ایک صارف نے اس مسئلے کا حل بتاتے ہوئے لوگوں کو مشورہ دیا کہ جو کوئی اس شخص کو پکڑے گامیں اسے 5 لاکھ روپے بطور انعام دوں گا۔ چند روز قبل پولیس نے ملزم کا حلیہ بتاتے ہوئے کہا تھا کہ ملزم کا قد 5 فٹ 7 انچ ہے اور اس کی عمر 20 سے 30 سال کے درمیان ہے جب کہ وہ ہیلمٹ پہن کر رکھتا ہے ، ارتضیٰ نامی صارف نے پولیس کی معلومات پر برہم ہوتے ہوئے لکھا کہ کراچی کے آدھے لڑکوں کا حلیہ ایسا ہی ہوتا ہے اس میں نئی بات کیا ہے۔ ایک اور صارف نے لکھا ایسا لگتا ہے را کا ایجنٹ پکڑنا چھری مارنے والے چھلاوے سے زیادہ آسان ہے۔ جب کہ ایک اور صارف نے مزاحیہ انداز میں لکھا آج کل کراچی کے تمام شوہر اپنی بیویوں سے ایک ہی فرمائش کررہے ہیں ، چلو تمہیں گلستان جوہر گھماکر لاؤں۔
آج کل کراچی کے سارے شوہر اپنی بیگمات سے ایک ہی فرمائش کر رہے ہیں، چلو ڈارلنگ تمہیں گلستان جوہر گھما کہ لاؤں۔ایک صارف نےلکھا کہ ایسا لگتا ہے ان حملوں کے پیچھے کچھ سیاسی محرکات ہیں، جو شہر میں طاقت حاصل کرناچاہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

محبت ہی میں امتِ مسلمہ کی قوت کا راز پنہاں ہے

محبت ہی میں امتِ مسلمہ کی قوت کا راز پنہاں ہے

مسلمانوں کی حُبِّ رسول ؐکی خبر نہ ہو، وہ اسلام کی قوت کا احساس کرہی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے