نیب نے نااہل اور سابق وزیراعظم کیخلاف ایک اور انکوائری کا آغاز کردیا

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف ایک اور انکوائری کا آغاز کر دیا ہے۔ ایل ڈی اے کے پلاٹوں کی غیر قانونی منتقلی کے حوالے سے تحقیقات میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے علاوہ 13 بیورو کریٹس اور دیگر اہم شخصیات کے حوالے سے تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے اور سابق وزیر اعظم اور دیگر افراد کو 29 ستمبر کو نیب لاہور میں طلبی کا نوٹس بھی ارسال کردیا گیا ہے۔ نجی ٹی وی چینل نے اپنے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ نیب لاہور نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو ایل ڈی اے کے پلاٹوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ کے حوالے سے تحقیقات کے لئے 29 ستمبر کو طلب کر لیا ہے۔ نیب لاہور کے مطابق نواز شریف نے بطور وزیر اعلیٰ پنجاب 25 پلاٹس من پسند بیورو کریٹس اور اعلیٰ افسران کو غیر قانونی طور پر الاٹ کیے تھے۔ نیب لاہور نے اس حوالے سے سی سی پی او لاہور کو مراسلہ لکھ دیا ہے، یہ خط نیب اہلکار ثناء خلیل کی جانب سے جاری کیا گیا ہے۔ خط میں لکھا گیا ہے کہ وہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ساتھ ساتھ دیگر 13 افراد کی نیب لاہور میں حاضری کو یقینی بنانے کے لئے اقدامات کریں۔ نیب لاہور نے ایل ڈی اے پلاٹوں کے حوالے سے سابق وزیر اعظم سے تحقیقات کے لئے محسن سلطان کو تفتیشی افسر مقرر کیا ہے۔ سابق وزیر اعظم کے علاوہ جن دیگر افراد کے حوالے سے تحقیقات کا آغاز کیا گیا ہے ان میں چوہدری عبد الرحمان، سید فرید الدین، معظم علی، محمد اشفاق، احسان الحق، سید حسنات احمد، کرنل (ر) غضنفر علی، محمد خان، محمد جاوید، محمد سرور، رکن الدین، ناظم علی شاہ اور خالد اختر شامل ہیں۔ خط میں سی سی پی او کو کہا گیا ہے کہ وہ متعلقہ ایس ایچ اوز کو پابند کریں کہ وہ ان تمام افراد کی نیب لاہور میں حاضری کو یقینی بنائیں۔

یہ بھی پڑھیں

شاہد خاقان عباسی ایل این جی کیس میں نیب کے سامنے پیش

شاہد خاقان عباسی ایل این جی کیس میں نیب کے سامنے پیش

راولپنڈی: مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں اس وقت کے وزیرپٹرولیم شاہد خاقان عباسی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے