خالصتان کے نعرے کیساتھ، ہزاروں سکھ نیویارک کی سڑکوں پہ

نیویارک: بھارت کی جانب سے جنیوا میں آزاد بلوچستان کی تشہیری مہم شروع کرنے کی سازش کے بعد اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس کے موقع پر سکھ بھی میدان میں آگئے اور امریکہ میں مظاہرے شروع کردیئے جس سے مودی سرکار دنیا بھر میں ذلیل و رسوا ہو کر رہ گئی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق خالصتان تحریک کے حامی ہزاروں سکھوں نے نیویارک کے ٹائمز سکوائر میں بھارت مخالف ریلی نکالی۔ اس موقع پر انہوں نے بھارت مخالف بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر آزادی کے نعرے بھی درج تھے۔ سکھوں نے اپنے مظاہرے کے دوران نہ صرف آزادی کا مطالبہ کیا بلکہ بھارت کو دہشتگرد ریاست اور سکھوں کی قاتل سٹیٹ قرار دیا۔ سکھ مظاہرین نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ ان پر جاری بھارتی مظالم کا سلسلہ بند کرایا جائے اور 1984 کے گولڈن ٹیمپل واقعہ میں مارے جانے والے سکھوں کے اہلخانہ کی انصاف کی فراہمی میں مدد کی جائے۔

یہ بھی پڑھیں

اپنی سلامتی اور دفاع کے لیے پوری طرح آمادہ ہیں

بیجنگ:  تاریخ خود گواہ ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے کبھی جارحیت اور جنگ کا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے