نیشنل بینک کا سابق صدر بھی کرپشن الزام میں گرفتار

کراچی:  نیشنل بینک کے سابق صدر علی رضا سمیت 7 ملزمان کی عبوری ضمانت منسوخ کرتے ہوئے گرفتاری کا حکم سندھ ہائیکورٹ نے جاری کیا۔ تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں نیشنل بینک کی بنگلادیش شاخ میں 18 ارب روپے کی کرپشن کیس کی سماعت ہوئی۔ نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کے سامنے بیان دیا کہ علی رضا ناصرف نیشنل بینک کے صدر تھے، بلکہ چئیرمین بورڈ آف ڈائریکٹر، چئیرمین آڈٹ کمپنی اور چئیرمین ایچ آر بھی تھے، 2009ء میں ہونے والی بینک کی آڈٹ رپورٹ میں کرپشن کا انکشاف ہوا ہے، جبکہ گورنر اسٹیٹ بینک نے بھی نیشنل بینک میں کرپشن کی شکایت کی تھی۔ پراسیکیوٹر نے مزید کہا کہ ملزم پر نیشنل بینک بنگلادیش میں 18 ارب روپے کی خوردبرد کا الزام ہے اور ان ملزمان میں سابق صدر نیشنل بینک علی رضا، عمران بٹ، وسیم، ابراربیگ اور عمران غنی سمیت بنگلا دیشی باشندے بھی نامزد ہیں۔ عدالت نے سابق صدر نیشنل بینک علی رضا سمیت ساتوں ملزمان کی عبوری ضمانت منسوخ کرتے ہوئے ملزمان کو گرفتار کرنے کا حکم دے دیا، جبکہ قمر حسین اور کوثر ملک کی عبوری ضمانت کی توثیق کر دی۔ نیب نے سابق صدر نیشنل بینک علی رضا کو احاطہ عدالت سے گرفتار کرلیا۔

یہ بھی پڑھیں

کب تک جھوٹے وعدوں پراعتبار کرو گے

کب تک جھوٹے وعدوں پراعتبار کرو گے

کراچی : مصطفیٰ کمال کا کراچی کے شہریوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے