14 علماء اور خطبا پر وفاقی دارالحکومت میں داخلے پر پابندی عائد

اسلام آباد: مقامی انتظامیہ نے محرم الحرام میں نقص امن کے خدشے کے پیش نظر مختلف مکاتب فکر کے 14 علماء اور خطبا پر وفاقی دارالحکومت میں داخلے پر پابندی عائد کر دی۔ تفصیلات کے مطابق، محرم الحرام کے دوران نقص امن سے بچنے کے لیے مختلف مکاتب فکر 14 علما اور خطبا پر وفاقی دارالحکومت کی حدود میں داخل ہونے پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ جن علما پر پابندی لگائی گئی ہے ان میں حافظ محمد صدیق، مولاناالیاس گھمن، علامہ طاہر اشرف، مولانا عبدالخالق، مولانا اورنگزیب فاروقی، مولانا یوسف رضوی، پیر عرفان مشہدی، مولانا خادم حسین رضوی، ڈاکٹر آصف اشرف جلالی، سید ذکر مقبول، حافظ تصدق حسین، مولانا محمد اقبال، علامہ غضنفر تونسوی اور جعفر جتوئی شامل ہیں۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اسلام آباد مشتاق احمد کی جانب سے جاری کردہ نوٹی فکیشن کے مطابق یہ تمام علما آئندہ 2 ماہ تک اسلام آباد کی حدود میں نا تو داخل ہو سکیں گے اور نا ہی کسی بھی اجتماع سے خطاب کرسکیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

پارلیمانی, نظام میں بہت, سمجھوتے کرنا, پڑتے ہیں

پارلیمانی نظام میں بہت سمجھوتے کرنا پڑتے ہیں

اسلام آباد: مؤثر حکومت کے لیے اہل لوگوں کو حکومت میں شامل کرنے کا اختیار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے