ہم نے شرپسند عناصر کو کمزور کیا، ختم نہیں کیا، مولانا فضل الرحمان

اسلام آباد: جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ یہ توقع تھی کہ اپیلیں مسترد ہی ہوں گی تاہم کچھ فیصلے تاریخ پر چھوڑنے چاہئیں جب کہ ایسے فیصلے دنیا میں مثال کے طور پر استعمال نہیں ہوتے۔ اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ یہ توقع تھی کہ اپیلیں مسترد ہی ہوں گی تاہم کچھ فیصلے تاریخ پر چھوڑنے چاہئیں، ایسے فیصلے دنیا میں نظیر کے طور پر استعمال نہیں ہوتے، بھٹو کی پھانسی کے فیصلے کو عدالتی قتل قرار دیا گیا، جب کہ محاذ آرائی کی طرف نہیں جانا چاہیئے۔ اس سے گریز کرنے پر سسٹم چلتا رہے گا اور سسٹم کو کوئی نقصان نہی ہو گا۔ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ لوگ ووٹ مسلم لیگ (ن) کو ہی دیں گے، پنجاب اور وفاق میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت ہے جب کہ الیکشن میں پنجاب کا اہم کردار ہوتا ہے۔ ورلڈ الیون کی پاکستان آمد دنیا کے اعتماد کا مظہر ہے، ہم نے شر پسند عناصر کو کمزور کیا لیکن ختم نہیں۔

یہ بھی پڑھیں

پارلیمانی, نظام میں بہت, سمجھوتے کرنا, پڑتے ہیں

پارلیمانی نظام میں بہت سمجھوتے کرنا پڑتے ہیں

اسلام آباد: مؤثر حکومت کے لیے اہل لوگوں کو حکومت میں شامل کرنے کا اختیار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے