محرم الحرام، کراچی میں عزاداری کے اجتماعات دہشتگردوں کے نشانے پہ، رپورٹ

کراچی: محرم الحرام کے دوران شہر کے مضافاتی علاقوں میں جلوسوں اور مجالس پر دہشت گردی کا خطرہ ہے، کالعدم تنظیم کے دہشت گرد لیاری سمیت شہر کی کچی آبادیوں میں موجود ہیں جو یوم عاشور سے قبل کسی بھی علاقے میں کارروائی کر سکتے ہیں۔ سی ٹی ڈی کے ایک سینئر افسر نے مقامی اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کو اطلاعات ملی ہیں کہ محرم الحرام کے دوران ملیر، لانڈھی، کورنگی، بلدیہ ٹاؤن اور اورنگی سمیت دیگر علاقوں میں واقع امام بارگاہوں سے برآمد ہونے والے ماتمی جلوسوں اور مجالس پر دہشت گردی کا خطرہ ہے اور دہشت گرد یوم عاشور سے قبل اپنی کارروائیاں کر سکتے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ مختلف کالعدم تنظیموں کے کارندوں نے اپنی جماعتوں سے منحرف ہوکر علیحدہ مسلح گروپ بنا لیا ہے اور انہوں نے لیاری سمیت شہر کی دیگر کچی آبادیوں میں پناہ لے رکھی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شہر کے پختون آبادی والے علاقوں سائٹ، میٹروول اور اس سے ملحقہ آبادیاں، اتحاد ٹاؤن، منگھو پیر، لانڈھی، قائدآباد، کورنگی، سہراب گوٹھ اور دیگر علاقے جہاں کالعدم تحریک طالبان کے دہشت گرد بھی روپوش ہیں میں زیادہ خطرات ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ پولیس اور دیگر ادارے خفیہ معلومات اکٹھی کرکے محرم الحرام میں فول پروف سیکیورٹی فراہم کرنے کیلئے ایک جامع پلان مرتب کررہے ہیں جو تین سے چار فیز پر مشتمل ہوگا، پولیس و رینجرز کے 30 ہزار سے زائد جوان پورے شہر میں تعینات کئے جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے کیلیے 11 رکنی ٹاسک فورس تشکیل

لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے کیلیے 11 رکنی ٹاسک فورس تشکیل

کراچی: سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے سندھ بھر میں قائم لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے