ایم کیو ایم رہنماؤں کی زندگی کو خطرہ لاحق ہے، فاروق ستار

اسلام آباد: متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سربراہ فاروق ستار کا کہنا ہے کہ ہمارے رہنماؤں اور پارلیمنٹرینز کی زندگیوں کو خطرات ہیں جب کہ صوبائی حکومت ہمارے رہنماؤں کے قتل کے بعد خالی نشستیں چاہتی ہے۔ اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو میں ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار کا کہنا تھا کہ آج کے ایجنڈا میں 80 فیصد حصہ ایم کیو ایم پاکستان کا تھا، جاگیر داروں کو ملنے والی بے پناہ زمینوں کی تقسیم بڑا مسئلہ ہے۔ زمین کی تقسیم کے لیے سب سے پہلے ایوب خان نے اقدامات کیے جب کہ دوسری کوشش ذوالفقار علی بھٹو نے کی تاہم ان کے اپنے ساتھیوں نے مزاحمت کی۔ سیاسی وڈیروں اور جاگیرداروں نے ان اقدامات کو ناکام بنا دیا۔ فاروق ستار کا کہنا تھا کہ پرانے جاگیرداروں نے نئے جاگیرداروں کی ایک نئی کھیپ بھی تیار کر لی ہے تاہم زمینی اصطلاحات کے بغیر موروثی سیاست کا خاتمہ ممکن نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماؤں اور پارلیمنٹرینز کی زندگیوں کو خطرات ہیں، صوبائی حکومت ہمارے رہنماؤں کے قتل کے بعد خالی نشستیں چاہتی ہے جب کہ خواجہ اظہار الحسن پر حملہ کی تحقیقات ہونا چاہیے اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچنا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں

پارلیمانی, نظام میں بہت, سمجھوتے کرنا, پڑتے ہیں

پارلیمانی نظام میں بہت سمجھوتے کرنا پڑتے ہیں

اسلام آباد: مؤثر حکومت کے لیے اہل لوگوں کو حکومت میں شامل کرنے کا اختیار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے