ولی بابر قتل کیس، فیصل موٹا کی سزائے موت کالعدم قرار، معاملہ ماتحت عدالت منتقل

کراچی: سندھ ہائی کورٹ لاڑکانہ بینچ نے ولی بابر قتل کیس میں ایم کیو ایم کارکن فیصل موٹا کی سزائے موت کالعدم قرار دیتے ہوئے فیصلہ ماتحت عدالت کو بھجوا دیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں شہید ولی بابر قتل کیس کی سماعت ہوئی جس میں ہائی کورٹ کے لاڑکانہ بینچ نے فیصل موٹا کی سزائے موت کالعدم قرار دے کر معاملہ از سر نو سماعت کیلئے ماتحت عدالت کو بھیج دیا۔ ایم کیو ایم کارکن فیصل موٹا کو ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو پر چھاپے کے دوران گرفتار کیا گیا تھا، جسے اس کی غیر موجودگی میں یکم مارچ 2014ء کو سزائے موت سنائی گئی تھی، فیصل موٹا کی سزائے موت اسی لئے کالعدم قرار دی گئی ہے، کیونکہ وہ سزا سنائے جانے کے وقت عدالت میں موجود نہیں تھا۔ واضح رہے کہ نجی ٹی وی کے رپورٹر ولی خان بابر کو 13 جنوری 2011ء کو کراچی میں گولیاں مار کر قتل کردیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

ڈاکٹر جمیل جالبی نامور, اردو نقاد، ماہرِ لسانیات, اور ادبی, مؤرخ, تھے

ڈاکٹر جمیل جالبی نامور اردو نقاد، ماہرِ لسانیات اور ادبی مؤرخ تھے

کراچی: ممتاز ادیب، محقق، دانشور اور استاد ڈاکٹر جمیل جالبی انتقال کرگئے ڈاکٹر جمیل جالبی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے