عائشہ گلالئی اکثر میرے پاس دبئی آتی تھیں اور پارٹی بدلنے کے بارے میں کہا کرتی تھیں، پرویز مشرف

کراچی: سابق صدر پرویز مشرف نے انکشاف کیا ہے کہ پی ٹی آئی کی منحرف رہنما عائشہ گلالئی اکثر ان کے پاس دبئی جاتی تھیں اور پارٹی بدلنے کے بارے میں کہا کرتی تھیں، جس پر انہوں نے عائشہ کو پارٹی بدلنے کی اجازت دے دی تھی۔ نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سابق صدر پرویز مشرف کا کہنا تھا کہ جب ان کی حکومت ختم ہوگئی تو عائشہ گلالئی اکثر دبئی آتی رہتی تھیں، وہ حالات کا تذکرہ کرتے ہوئے پارٹی بدلنے کا کہتی تھیں، جس پر اس وقت میں نے کہا کہ اگر آپ جانا چاہتی ہیں تو چلی جائیں۔ سابق صدر کا کہنا تھا کہ وہ عائشہ گلالئی کو بہت ہی قابل عزت سمجھتے ہیں، کیونکہ عائشہ باصلاحیت ہے اور بولتی بھی اچھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سیاست میں اس قسم کی باتیں نہیں ہونی چاہئیں، میں 62/63 پر پورا نہیں اترتا لیکن اسمبلیوں میں بیٹھے ہوئے 1100 لوگ صادق اور امین ہیں لیکن میں صادق اور امین نہیں ہوں۔ ایک سوال کے جواب میں پرویز مشرف کا ہنستے ہوئے کہنا تھا کہ اگر عمران خان 62/63 کے تحت نا اہل ہو جاتے ہیں تو انہیں کوئی حیرت نہیں ہوگی، کیونکہ عدالتیں نواز شریف کی نا اہلی کے بعد پریشر میں بھی ہو سکتی ہیں اور عمران خان کو نا اہل کرکے بیلنس بھی کیا جا سکتا ہے۔ واضح رہے کہ تحریک انصاف کی منحرف رہنما عائشہ گلالئی پی ٹی آئی میں آنے سے پہلے سابق صدر پرویز مشرف کے ساتھ تھیں۔

یہ بھی پڑھیں

مساجد, و گلی, محلوں میں, میلاد و ذکر و نعت کی محافل

مساجد و گلی محلوں میں میلاد و ذکر و نعت کی محافل

کراچی: رحمتوں اور برکتوں بھری رات شب برات آج ملک بھر میں عقیدت و احترام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے