اسرائیلی وزیراعظم کی اہلیہ کیخلاف سرکاری خزانے میں خورد برد کی تحقیقات

تل ابیب: اسرائیلی وزیراعظم بن یامین نیتن یاہو کی اہلیہ سارہ نیتن یاہو کے خلاف سرکاری خزانے میں خورد برد کے الزام میں تحقیقات شروع کر دی گئیں۔ اسرائیلی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق پولیس نے سرکاری فنڈز کے غیر قانونی استعمال پر سارہ نیتن یاہو سے تل ابیب میں دو گھنٹے تک تفتیش کی۔ سارہ نیتن یاہو پر الزام ہے کہ انہوں نے مقبوضہ بیت المقدس میں واقع اپنے ذاتی گھر پر سرکاری خزانے سے پیسے خرچ کیے۔ پولیس پہلے ہی اس کیس میں سارہ نیتن یاہو پر فرد جرم عائد کرنے کی سفارش کرچکی ہے جبکہ اب سرکاری اٹارنی نے بھی ان پر فرد جرم عائد کرنے کی سفارش کر دی ہے۔

گزشتہ برس دسمبر میں بھی سارہ نیتن یاہو سے پولیس نے 12 گھنٹے تک تفتیش کی تھی اور ان سے وزیراعظم کی رہائش گاہ پر اخراجات سمیت مختلف معاملات پر سوالات کیے تھے۔ خود اسرائیلی وزیراعظم بن یامین نیتن یاہو پر بھی بدعنوانی کے الزامات ہیں جن کی تحقیقات کی جا رہی ہیں تاہم ان پر اب تک فرد جرم عائد نہیں کی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

برطانوی تیل بردار جہاز کو عالمی قوانین کی خلاف کرنے کے الزام میں قبضے میں لے لیا

برطانوی تیل بردار جہاز کو عالمی قوانین کی خلاف کرنے کے الزام میں قبضے میں لے لیا

تہران: ایرانی رضاکار فورس بیسج (سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی) کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے