مسلم لیگ (ن) کا مشاورتی اجلاس آج بھی بغیر نتیجے کے ختم، وفاقی کابینہ کا فیصلہ نہ ہوسکا

مری: مسلم لیگ (ن) کے مشاورتی اجلاس میں شہباز شریف کے مستقل وزیراعظم اور وفاقی کابینہ کا حتمی فیصلہ نہ ہوسکا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق مری میں مسلم لیگ (ن) کا مشاورتی اجلاس ہوا جس میں نومنتخب وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، سابق وزیراعظم نوازشریف، وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور دیگر افراد شریک تھے۔ اجلاس میں وفاقی کابینہ تشکیل دینے پر تفصیلی مشاورت کی گئی جب کہ وزیراعلیٰ پنجاب کے مستعفیٰ ہونے اور مرکز میں شامل ہونے سے متعلق بھی تفصیلی گفتگو کی گئی۔ ذرائع کے مطابق نئی کابینہ میں 3 سے 4 نئے وزیر شامل کیے جائیں گے جب کہ ایک مستقل وزیرخارجہ بھی تعینات کیا جائے گا اور خواجہ آصف سے وزیردفاع کی ذمہ داریاں واپس لے کر کسی اور کو سونپی جائیں گی۔

شاہد خاقان عباسی کے وزیراعظم بننے کے بعد وزارت پیٹرولیم بھی کسی اور کے حصے میں آئے گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار اور وزیرخزانہ اسحاق ڈار شاہدخاقان عباسی کی کابینہ میں شامل ہونے کے لیے تیار نہیں ہیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ رات بھی ایک اجلاس ہوا جس میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، نواز شریف، شہباز شریف، چوہدری نثار، اسحاق ڈار اور سعد رفیق سمیت اہم رہنماؤں نے شرکت کی، چھ گھنٹے سے زائد جاری رہنے والے اجلاس میں شہباز شریف کو مستقبل میں وزیراعظم بنانے اور وفاقی کابینہ کی تشکیل کے حوالے سے تفصیلی مشاورت کی گئی تھی۔

یہ بھی پڑھیں

رانا ثنا اللہ کے خلاف منشیات برآمدگی کیس کی سماعت

رانا ثنا اللہ کے خلاف منشیات برآمدگی کیس کی سماعت

لاہور: مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی رانا ثنا اللہ کو جوڈیشل ریمانڈ ختم …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے