امن پسند ہیں لیکن اپنی عملداری پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے، چین

بیجنگ: چین کے صدر شی جن پنگ نے کہا ہے کہ ان کا ملک امن پسند ہے لیکن اپنی عملداری پر کبھی سمجھوتہ نہیں کرے گا۔ پیپلز لبریشن آرمی کے 90 یوم تاسیس پر گریٹ ہال پیپلز میں خطاب کرتے ہوئے صدر شی جن پنگ نے براہ راست کسی ملک کا نام نہیں لیا اور نہ ہی کسی سرحدی تنازع کی طرف اشارہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ چین کے عزائم پرامن ہیں لیکن وہ کسی سے دبنے والا ملک نہیں۔

صدر شی جن پنگ نے کہا کہ چین کے عوام امن پسند ہیں اور ہم کبھی جارحیت یا توسیع پسندانہ رویہ اختیار نہیں کریں گے لیکن ہم تمام جارح قوتوں کو شکست دینے کی صلاحیت بھی رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم کسی بھی قوم، تنظیم یا سیاسی جماعت کو چین کا کوئی بھی علاقہ اس سے علیحدہ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے، کوئی اس خوش فہمی میں نہ رہے کہ ہم ایسا کڑوا پھل نگلیں گے جو ہماری خودمختاری، سلامتی اور ترقیاتی مفادات کے لیے نقصان دہ ہو۔

صدر شی جن پنگ نے کہا کہ پانچ سال کی سخت محنت کے بعد چینی فوج نے کامیابی سے اپنے تنظیمی و طاقت کے ڈھانچے اور ساکھ کی تشکیل نو کرلی ہے۔ چینی صدر نے مزید کہا کہ ہمارا اصول ہے کہ ’’بندوقوں پر پارٹی کا حکم چلتا ہے اور بندوقیں کبھی پارٹی کو نہیں چلاتیں‘‘۔ واضح رہے کہ چین کے صدر شی جن پنگ نے برسراقتدار آنے کے بعد کرپشن کے خلاف مہم شروع کی ہے اور فوج کے متعدد اعلیٰ افسر بھی اس کی لپیٹ میں آئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

ایران پر حملے کی امریکہ میں مخالفت

ایران پر حملے کی امریکہ میں مخالفت

سروے رپورٹ سے پتہ چلتا ہے کہ بیشتر امریکی عوام ایران کے خلاف فوجی حملے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے