سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین سے آف شور کمپنیوں کی تفصیلات طلب کر لیں

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین سے آف شور کمپنیوں کی تفصیلات طلب کر لی ہیں۔ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں جسٹس عمرعطا بندیال اور جسٹس فیصل عرب پر مشتمل سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ مسلم لیگ نون کے رہنما حنیف عباسی کی جانب سے جہانگیر ترین کی نااہلی کے لیے دائر درخواست کی سماعت کر رہا ہے، جس میں تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین پر آف شور کمپنیاں بنانے، ٹیکس چوری کرنے اور بےنامی جائیدادیں بنانے کے الزامات عائد کئے گئے ہیں۔ درخواست گزار حنیف عباسی کے وکیل عاضد نفیس نے کہا کہ پاناما لیکس اور آف شور کمپنیوں کے باعث کیس یہاں لائے گئے جو عوامی اہمیت کے حامل ہیں۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا پاناما لیکس کی بنیاد پر کیس سنیں، جب دوسرے فورمز موجود ہیں تو کیا کیس یہاں لایا جاسکتا ہے، آج جہانگیر ترین ہیں کل کسی اور رکن اسمبلی کے خلاف بھی درخواست آجائے گی، کیا ہر پارلیمنٹیرین کیخلاف کیس براہ راست سپریم کورٹ لایا جا سکتا ہے۔
درخواست گزار نے کہا کہ عدالت جہانگیر ترین سے تحفہ میں دی اور وصول کی گئی رقم کی تفصیلات طلب کرے، جہانگیر ترین نے بچوں کو ایک ارب 47 کروڑ روپے سے زائد رقم تحفے میں دی، 2010ء میں انہیں بچوں سے 8 کروڑ 75 لاکھ تحفے میں ملے، بعد ازاں 2015ء میں انہیں چھ کروڑ ستانوے لاکھ پچاس ہزار روپے تحفہ ملا۔

یہ بھی پڑھیں

شاہد خاقان عباسی ایل این جی کیس میں نیب کے سامنے پیش

شاہد خاقان عباسی ایل این جی کیس میں نیب کے سامنے پیش

راولپنڈی: مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں اس وقت کے وزیرپٹرولیم شاہد خاقان عباسی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے