مستونگ میں دہشت گردوں کی فائرنگ، ہزارہ برادری کے 4 افراد جاں بحق

کوئٹہ: صوبہ بلوچستان کے شہر مستونگ کے قریب نامعلوم مسلح حملہ آور کی فائرنگ سے ہزارہ شیعہ برادری سے تعلق رکھنے والے 4 افراد جاں بحق ہوگئے۔ پولیس ذرائع کے مطابق نامعلوم مسلح حملہ آور نے ایک گاڑی پر فائرنگ کردی، جس کے نتیجے میں خاتون سمیت گاڑی میں سوار 4 افراد جاں بحق ہوئے، جن کی لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے لیے ہسپتال منتقل کردیا گیا۔

فائرنگ کے بعد حملہ آور جائے وقوع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا جبکہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے واقعے کی تحقیقات کا آغاز کردیا گیا۔

پولیس ذرائع کی جانب سے ہزارہ افراد پر ہونے والے اس حملے کو ٹارگٹ کلنگ قرار دیا گیا۔

دوسری جانب امریکی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کا مقامی پولیس چیف محمد اسحٰق کے حوالے سے کہنا ہے کہ اس واقعے میں ہزارہ افراد کے ساتھ ساتھ ان کا ڈرائیور بھی ہلاک ہوا۔

بلوچستان کے وزیر داخلہ سرفراز بگٹی نے بھی واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے ‘بلوچستان کی سماجی اور قبائلی روایات کے خلاف قرار دیا’۔

خیال رہے کہ صوبہ بلوچستان میں مختلف کالعدم تنظیمیں، سیکیورٹی فورسز اور پولیس اہلکاروں پر حملوں میں ملوث رہی ہیں جبکہ گذشتہ ایک دہائی سے صوبے میں فرقہ وارانہ قتل و غارت میں اضافہ ہوا ہے۔

صوبے میں گذشتہ 15 سالوں کے دوران ہزاارہ شیعہ برادری کو نشانہ بنائے جانے کے ایک ہزار 400 سے زائد واقعات پیش آچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

کوئٹہ, میں شدید ,بارش اور, سرد موسم کے باوجود ہزارہ برادری کا, دھرنا چوتھے, روز بھی, جاری

کوئٹہ میں شدید بارش اور سرد موسم کے باوجود ہزارہ برادری کا دھرنا چوتھے روز بھی جاری

کوئٹہ: جمعہ کو کوئٹہ کے علاقے ہزار گنجی کی سبزی منڈی میں ہونے والے دھماکے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے