الطاف حسین ایک ایسا بزدل قاتل اور سانپ ہے جو اپنے بچے کھا رہا ہے، مصطفیٰ کمال

کراچی: پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ الطاف حسین ایک ایسا بزدل قاتل اور سانپ ہے جو اپنے بچے کھا رہا ہے، بانی متحدہ 22 اگست کو مرگیا تھا جسے فاروق ستار اینڈ کمپنی نے دوبارہ زندہ کردیا ہے، جن جن لوگوں کا نام ایم کیو ایم اور الطاف حسین سے جڑا ہے ان سے ہمارا کوئی تعلق نہیں ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اورنگی ٹاؤن میں مسلح افراد کی فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے پارٹی کے عہدیدار عبدالمجید عرف ندیم مولانا کی نماز جنازہ کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس سے قبل ندیم مولانا کی نماز جنازہ جامع مسجد بنارس اورنگی ٹاؤن میں ادا کی گئی اور انہیں اورنگی ٹاؤن نمبر 8 کے قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا۔

نماز جنازہ اور تدفین میں پی ایس پی کے مرکزی رہنماؤں، کارکنوں اور مرحوم کے عزیز و اقارب نے شرکت کی۔ اس موقع پر پی ایس پی کے کارکنوں نے ’’قاتل قاتل الطاف قاتل‘‘ کے نعرے لگائے اور قاتلوں کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔ مصطفیٰ کمال نے اپنے خطاب میں کہا کہ الطاف حسین لندن میں رہ کر بھی اپنے لوگوں کو مار رہا ہے، الطاف حسین 22 اگست کو مرگیا تھا، الطاف حسین کو فاروق ستار اینڈ کمپنی نے زندہ کیا ہے، ایم کیو ایم کا میئر الطاف حسین کو لندن میں پیسے بھجوا رہا ہے، جو بھی ایم کیو ایم کو اٹھا رہا ہے وہ الطاف حسین کو زندہ کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بانی متحدہ قاتل ہے اور لوگوں کو مارنے کا درس دے رہا ہے، الطاف حسین ایسا بزدل قاتل اور سانپ ہے جو اپنے بچے کھا رہا ہے، ہمارے کارکنوں کو پرامن رہنے کی سزا دی گئی ہے، یہ کسی شرابی کے لئے پیسے جمع کرنے کے پیچھے نہیں مارے گئے، ہم نے کارکنوں کو صبر کی تلقین کی ہے، ہمارے کارکنوں نے ایک دکان کو بند نہیں کرایا اور ایک پتھر نہیں مارا، میں نے اپنے نوجوانوں کے ہاتھوں میں ہتھیار نہیں دیئے، بے گناہوں کو مارنے والے سمجھتے ہیں کہ ان کو کبھی نہیں مرنا لیکن میں بتادینا چاہتا ہوں کہ وہ بھی ایک دن مریں گے۔ مصطفیٰ کمال نے کہا کہ جو لوگ قتل میں ملوث ہیں مقدمہ ان ہی کے خلاف درج کرایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں

ٹرینوں کا آپریشن تاحال معمول پر نہیں آسکا

ٹرینوں کا آپریشن تاحال معمول پر نہیں آسکا

کراچی: ریلوے کی غفلت کے باعث ٹرینوں کا آپریشن تاحال معمول پر نہیں آسکا ہے۔ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے