کراچی اور کوئٹہ میں تحریک طالبان کی جانب سے بڑی دہشتگردی کا خدشہ، الرٹ جاری

کراچی: قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کراچی اور کوئٹہ میں قائم جیلوں، حساس مقامات و تنصیبات اور سرکاری اداروں میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے ایک بڑی دہشتگردی کا منصبوبہ بندی کا خدشہ ظاہر کر دیا، جس کے باعث سیکیورٹی اداروں کو مذکورہ حساس مقامات پر سیکیورٹی سخت کرنے کی سفارش کی گئیں۔ تفصیلات کے مطابق قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کراچی اور کوئٹہ پولیس اور سیکیورٹی اداروں کو ایک خط ارسال کیا ہے، جس میں خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ سینٹرل جیل سے کالعدم دہشتگرد تنظیم لشکر جھنگوی کے دو خطرناک دہشتگرد قیدیوں کے فرار ہونے کے بعد کالعدم تحریک طالبان پاکستان کراچی اور کوئٹہ میں قائم جیلوں میں حملے کرنے کا ارادہ رکھتی ہے اور دہشتگردی پھیلانے کیلئے 3 دہشتگردوں کو تیار کیا گیا ہے، جبکہ یہ بھی خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ دہشتگرد باردو سے بھری گاڑی کے ذریعے حساس مقامات و تنصیبات اور سرکاری دفاتر پر بھی حملہ کر سکتے ہیں۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے پولیس اور سیکیورٹی اداروں سے سفارش کی ہے کہ وہ مذکورہ مقامات پر سیکیورٹی سخت اور پیٹرولنگ میں اضافہ کریں، تاکہ دہشت گرد اپنے ہدف میں کامیاب نہیں ہو سکیں۔

یہ بھی پڑھیں

سو سے زائد واردتوں میں ملوث ملزمان کو گرفتار

کراچی: 101 وارداتوں میں ملوث گروہ کے 3 کارندے گرفتار، ملزمان ہر شہر میں 25 …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے