محلے کی خواتین نے آدمی کو چھوٹی بچی کا ریپ کرتے پکڑلیا اور پھر اس کے ساتھ کیا کیا؟ دیکھ کر ہی ہر انسان کانپ اُٹھے

نئی دہلی: بھارت میں جنسی جرائم اس قدر ہوتے ہیں کہ اس کا ’قومی مسئلہ‘ قرار پا چکے ہیں جس پر بھارت سرکار قابو پانے میں بری طرح ناکام ہو چکی ہے۔ گزشتہ روزایک بھارتی قصبے میں بچی کے ساتھ زیادتی کا ایک ملزم رنگے ہاتھوں قصبے کی خواتین کے ہتھے چڑھ گیا اور انہوں نے اس کا وہ حشر کیا کہ اگر بھارت بھر کی خواتین اس مثال پر عمل کرنے لگیں تو انہیں ان ہوس زادوں سے نجات مل جائے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق قصبے کی خواتین نے اس ملزم کے بازو پشت پر باندھ دیئے اور ایک خاتون لمبی رسی کے ذریعے اسے زمین پر گھسیٹتی رہی جبکہ تین دیگر خواتین اس پر ڈنڈے برساتی رہیں۔

 

واقعے کی منظرعام پر آنے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ملزم بے سدھ زمین پر پڑا ہوتا ہے اور رسی تھامے خاتون اسے جس طرف کھینچتی ہے کھنچا چلا جاتا ہے۔ وہ ڈنڈوں پر بھی کوئی مزاحمت نہیں کرتا۔ درجنوں خواتین اور بچے اردگرد کھڑے یہ منظردیکھ رہے ہوتے ہیں۔ ویڈیو کے اختتام میں وہاں ایک پولیس آفیسر دیہاتیوں سے گفتگو کر رہا ہوتا ہے اور ملزم اس وقت بھی زمین پر بے سدھ پڑا ہوتا ہے۔ لائیو لیک پر پوسٹ کی گئی اس ویڈیو کو اب تک23ہزار سے زائد لوگ دیکھ چکے ہیں۔

واضح رہے کہ بھارت میں جنسی جرائم اس قدر زیادہ ہوتے ہیں کہ صرف 2015ءمیں 34ہزار واقعات پولیس کو رپورٹ ہوئے اور یہ تعداد اصل واقعات سے کئی گنا کم ہے کیونکہ اکثر متاثرہ خواتین اور زیادتی کا شکار ہونے والے بچوں کے والدین معاشرے میں رسوائی کے خوف یا بڑی ذاتوں کے بااثر ملزمان کے ڈر سے پولیس کو رپورٹ ہی نہیں کرتے۔یہ ناسور اس قدر بھارت کے رگ و پے میں سرایت کر چکا ہے کہ وہاں جنسی زیادتی تو درکنار، اس کے بعد لڑکیوں کو پھندہ دے کر یا چلتی گاڑی سے دھکا دے کرقتل کردینے کی خبریں بھی متواتر آتی رہتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

ٹرمپ حافظ سعید کی گرفتاری پر اپنی منفی اور نفرت آمیز سوچ نہیں چھپا سکے

ٹرمپ حافظ سعید کی گرفتاری پر اپنی منفی اور نفرت آمیز سوچ نہیں چھپا سکے

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے حافظ سعید احمد کی گرفتاری پر پاکستان کے کردار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے