پارا چنار دھرنے کے شرکاء کے مطالبات فوری طور پر تسلیم کیے جائیں، نئیربخاری/ فرحت اللہ بابر

اسلام آباد: پاکستان پیپلزپارٹی کے سیکرٹری جنرل نیئر بخاری اور سینیٹر فرحت اللہ بابر نے اسلام آباد میں ایم ڈبلیو ایم کے احتجاجی کیمپ میں شرکت کی اور سانحہ پارچنار کے حوالے سے اپنی یکجہتی کا اظہار کیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سینیٹر نئیر حسین بخاری نے حکومت سے مطالبہ کیاکہ پارا چنار دھرنے کے شرکاء کے مطالبات فوری طور پر تسلیم کیے جائیں، انہوں نے کہا کہ سینیٹ اور قومی اسمبلی کے پاس فاٹا اور پاراچنار کے حوالے سے کوئی اختیار نہیں، یہ علاقے براہ راست صدر مملکت کے پاس آتے ہیں۔ انہوں نے پیپلزپارٹی کے وفد کو پاراچنار جانے سے روکنے کے عمل کی بھی قبل مذمت کی۔
سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا کہ پاراچنار میں ریاستی ادارے تحفظ کی فراہمی میں ناکام ہو چکے ہیں، فوج کی نگرانی میں کرم ملیشیاء کو پاراچنار واپس لایا جائے تاکہ حفاظتی انتظامات مضبوط ہوں۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتوں، سول سوسائٹی کے نمائندوں کو پاراچنار نہ جانے کی ریاستی پالیسی خطرناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کو پارا چنار جا کر متاثرین کے مطالبات کی منظوری دینی چاہئے۔ سابق وزیر داخلہ سینیٹر رحمان ملک نے کہاکہ مجھے پارا چنار جانے سے روک دیا گیا ہے جو ظلم کی انتہا ہے، اس سلسلے میں میں ایوان بالا میں قرار داد پیش کروں گا، انہوں نے کہا کہ ان کا حکومت سے مطالبہ ہے کہ پارا چنار کے مظاہرین کے مطالبات تسلیم کیے جائیں۔

یہ بھی پڑھیں

مولانا فضل الرحمٰن کی جانب سے تجویز کردہ مارچ سے کسی دباؤ کا شکار نہیں

مولانا فضل الرحمٰن کی جانب سے تجویز کردہ مارچ سے کسی دباؤ کا شکار نہیں

اسلام آباد:وزیراعظم سے ملاقات کرنے والے علما میں اسلامی نظریاتی کونسل (سی آئی آئی)، متحدہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے